• English
Home > سیٹلائیٹ رابطہ > فیب کا سیٹلائٹ فریکوئنسی رابطہ میں کردار

فیب کا سیٹلائٹ فریکوئنسی رابطہ میں کردار print

 

فیب کا سیٹلائٹ فریکوئنسی رابطہ میں کردار

مصنوعی سیارہ کے نیٹ ورک کی فریکوئنسی کو آرڈینیشن ایک پیچیدہ عمل ہے جس میں انتظامیہ تکنیکی مذاکرات میں مشغول دو یا دو سے زیادہ سیٹلائٹ نیٹ ورک کی ہم آہنگی آپریشن کو یقینی بنانے کے لئے ہے۔ سیٹلائٹ فریکوئنسی کو آرڈینیشن میں شامل جماعتیں اس بات کا یقینی بنانے کیلئے اپنی بہترین کوششیں کرتی ہیں (ممکن حد تک) کہ نئے سیٹلائیٹ نیٹ ورک کے آپریشن میں داخل ہونے کی گنجان آباد سیٹلائیٹ مارکیٹ میں بغیر وجوھات کے ،اور نھ ہی جائز سطح سے اوپرمداخلت کو وصول کرتا ہے،کسی دوسرے سیٹلائیٹ نیٹ ورک سے جو فریکونسی بینڈ کو چڑھاتا ہے اور یا مخصوص شرائط کے تحت کوریج کرتا ہے۔ مختلف مرحلوں پر فریکونسی کو آرڈینیشن کی مشق کی جگہ لے سکتا ہے جیسا کہ آپریٹر کے مرحلہ سے یا ایڈمنسٹریشن کے مرحلھ سے جس پر باھمی باتوں پر اتفاق ہو۔ سیٹلائٹ فریکوئنسی کو آرڈینیشن کا واحد مقصد دو طرفہ یا کثیر جہتی مذاکرات کے ذریعے متاثرہ جماعتوں کے درمیان باہمی قابل قبول حل تک پہنچنا ہے۔ یہ ذکر کرنا اہم ہے کہ فریکوئنسی کوآرڈینیشن کے ایک معاہدے پر دستخط کرنے کے لئے حتمی اتھارٹی انتظامیہ جو دراصل آئٹییو کے ساتھ سیٹلائٹ نیٹ ورک ہے دائر کے ساتھ ہی دلالت کر تا ہے اور آپریٹر سے نہیں۔ دونوں ممالک کے آپریٹرز آپریٹر کی سطح پر ملاقات کے دوران ان معاہدوں پر دستخط کر سکتے ہیں جن پر متعلقہ انتظامیہ کی حتمی منظوری کی ضرورت ہوتی ہے ۔ سیٹلائٹ فریکوئنسی کو آرڈینیشن کے پیچھے بنیادی مقصد پہلے سے آپریشنل سیٹیلائیٹ کے نظام میں نئے سیٹلائٹ نیٹ ورک میں داخل ہونے کی اجازت دینا ہے اور انہیں مقابلھ کیلئے موجودہ نظام پر منفی اثرات کے بغیر برابر موقع فراھم کرناھے۔

یہ ایک قائم شدہ حقیقت ہے کھ  جیو اسٹیشنری زمینی مدارمیں مدار کی سلاٹس اور متعلقھ ریڈیو اسپیکٹرم جدید دنیا کے وائرلیس کمیونیکیشن میں دشوار وسائل کی دو بھترین مثالیں ہیں ۔ ایسی صورت میں جیو اسٹیشنری زمینی مدار میں دشوار مدار کی سلاٹ تک رسائی رکھتی ہے اور اس بات کو یقینی بناتی ہے کھ منتخب کردہ نیا سیٹیلائیٹ پہلے سے آپریشنل میں نقصان دہ مداخلت کی وجہ پیدا نھ کرے یا سیٹیلائیٹ نیٹ ورکس منصوبوں اوردوسرے ایڈمنسٹریٹرز کو زمینی سروسز کو، آئٹییو۔آر ریڈیو ضابطے پرواجب ہے کہ نئے سیٹیلائیٹ نیٹ ورک دیگر تمام ریڈیو مواصلاتی نظام کے ساتھ رابطہ میں رہے جو کہ اس کے مجوزہ آپریشن کی وجہ سے متاثر کیا جا سکتا ہے۔ یہ کہا جاسکتا ہے کہ مدار کی پوزیشنوں تک رسائی اور بین الاقوامی حقوق کے قیام تک رسائی کا اطلاق بین الاقوامی سیٹلائیٹ نیٹ ورک کی فریکوئنسی کوآرڈینیشن ، نوٹیفکیشن، اور ریکارڈنگ کے طریقہ کار کو کامیاب عروج پرپھنچاتا ہے۔ آئٹییو۔آر کے ریڈیو ضابطوں کے مختلف مضامین اور ضمیموں جو وقت کے ساتھ ساتھ تبدیل ہوتے ہیں کےطریقھ کارمیں تفصیلی خاکہ بیان کرتا ہے۔ آئٹییو کے ان طریقہ کار کے مطابق، فریکوئنسی کوآرڈینیشن کو نئے سیٹلائٹ نیٹ ورک کی انتظامیہ کوپہلے سے آپریشنل ، پلان سیٹلائیٹ اور دوسرے ممالک کے زمینی نیٹ ورکس جو متاثر ھو سکتے ہیں کو مؤثر کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ سیٹلائٹ نیٹ ورک کا کامیاب فریکوئنسی کوآرڈینیشن کے نئے تجویز کردہ مصنوعی سیارے کے نیٹ ورک کی نوعیت پر بہت زیادہ انحصار ہے،ماحول جس میں آپریٹ کرنے کیلئے نیٹ ورک تجویزکیا جاتا ہے ۔ (مطلب یھ کہ مدار کی پوزیشن ، اسپیکٹرم اور زمین کی سطح پر علاقے کی کوریج کا مقصد ہے) ۔  مہارت کا درجہ اور ٹیم کی مذاکراتی صلاحیت ہے کھ منتخب درخواست گزار کو مذاکرات کی میز کی طرف لاتا ہے اور فریکوئنسی تعاون سے بھی ایک بہت ہی اہم کردار ادا کرتا ہے ۔ مندرجہ بالا کے علاوہ، ریڈیو کے ضابطوں میں کوآرڈینیشن ایک ایسا نظام وضع کرتا ہے جو اس بات کو یقینی بناتا ہے کہ ریڈیو اسپیکٹرم کے ایک ہی حصہ جیو اسیٹیشنری سیٹلائیٹ مدار میں ہر اتفاق شدہ زمینی پوزیشن کو ممکن حد تک دوبارہ سے استعمال کے قابل کیا جا سکے، ایک سیٹلائیٹ سے دوسرے کو بغیر  کسی مداخلت کے۔ اس طرح کے نتیجہ میں دشوار وسائل سے ہہت زیادہ موثر استعمال ہوتا ہے جو ایک بہت طویل اور وقت کے استعمال کے عمل کے ذریعے بین الاقوامی برادری کی طرف سے ریڈیو ریگولیشنز کی ترقی کے پیچھے اصل مقصد بھی ہے۔

 فریکونسی اسائمنٹ مخصوص مدار کی سلاٹ سے منسلک ہوتی ہے جو فریکونسی کوآرڈینیشن عمل کے کامیاب اختتام پر ریڈیو ضابطہ کے مطابق بین الاقوامی تسلیم شدہ یا حقوق جو ریکارڈنگ سے حاصل ہوتے ہیں یا ماسٹرانٹرنیشنل فریکونسی رجسٹرڈ(ایم آئی ایف آر) کو آئٹییو کی طرف سے برقرار رکھتا ہے جیسا کہ آرٹیکل ۸ کی شرائط سے ماخوذ ہے۔

سیٹلائٹ فریکوئنسی کوآرڈینیشن کی ذمہ داری کے ساتھ شامل سپیکٹرم مینیجرز کو بہت اچھی طرح سے حکم کومؤثر طریقے سے دونوں کی مہارت اور جدید آلات (ھارڈ ویئر اور سافٹ ویئر) کی شرائط میں سیٹلائٹ فریکوئنسی کو آرڈینیشن کے مندرجہ بالا پیچیدہ کام شروع کرنے کے لئے لیس کئے جانے کی ضرورت ہے۔   

فیب آئٹییو میں سیٹلائٹ نیٹ ورکس کے لئے پاکستان کے نامزد کردہ ایڈمنسٹریشن ہونے کی وجہ سے ان کی متاثرہ سروسز جو خلا میں ہو یا زمین پر،کے لئے دیگر انتظامیہ کے ساتھ قومی سیٹلائیٹ کی سیٹلائٹ فریکوئنسی کوآرڈینیشن کے لئے ذمہ دار ہے۔ فیب کے این اینڈ آئی سی ونگ کا اچھی طرح لیس پیشہ وارانہ عملہ سیٹلائٹ فریکوئنسی کوآرڈینیشن کے مکمل عزم اور لگن کے ساتھ اس فرض کو نبھا رہا ہے۔  اس سلسلے میں، فیب کامیابی سےپاک سات سیٹلائیٹ نیٹ ورکس کے بغیر منصوبے والے بینڈز ۳۸ ڈگری فارن ھائیٹ میں زمینی جگہ سے فریکونسی اسائمنٹس کے لیے فریکونسی کے مطابقت اور رجسٹریشن کے عمل کو کامیابی سے مکمل کررھا ہے۔

 

 

 

styltetdJlght'>۴۔ پیمائش بینڈوتھ

 

 

۵۔ اسپیکٹرم مداخلت کی تحقیقات

 

رابطہ کا پتہ

ایم ایف گھگھرکراچی /ایچ ایف

این ای ڈی یونیورسٹی کراچی،

وی ایچ ایف ٹاور/ نزد یو ایچ ایف

رابطہ کا نمبر

0300-9856664
021-4750542

 

متعلقھ شخص سے رابطہ

مسٹر علی اکبر دتو

ڈائریکٹر

0300-5008197

 

نوٹ۔

بیرونی مداخلت کی صورت میں ، مندرجہ ذیل ایڈریس پر مداخلت کی شکایت کا پرفارما بھرکر بھیجیں۔

ڈائریکٹر مانیٹرنگ (نارتھ) فیب ہیڈکوارٹر

پلاٹ نمبر ۱۱۲، سیکٹر ایچ۔۴/۱۰، اسلام آباد، پاکستان

Tel: 051-4435822 Fax: 051-9257595 Email: m.ateeque@fab.gov.pk