• English
Home > سپیکٹرم اسائمنٹ > حادثاتی حالات میں ریڈیو فریکوئنسی

حادثاتی حالات میں ریڈیو فریکوئنسی print

 

ضروری حقائق یا گائیڈ لائن کے ساتھ ریڈیو سپیکٹرم کی خطرات میں صحت پر مختصرجائزہ

ریڈیوویوزاور مائیکروویز برقی توانائی کے شکلیں ہیں جس کو ریڈیو فریکونسی یا آر ایف کی اجتماعی اصطلاح میںبیان کیا جاتا ہے۔ ریڈیو فریکونسی کی حد ۹ گیگا ھرٹز سے ۳۰۰۰ گیگا ھرٹز ہے۔ تابکاری کو توانائی کے لئے لہروں یا ذرات کے فروغ کے طور پر بیان کیا جاتا ہے۔  برقی توانائی ‘‘تابکاری’’ کو بہترین انداز میں اس طرح بیان کیا جاسکتا ہے کھ برقی اور مقناطیسی توانائی کی لہروں کے ساتھ مل کر زمین کے ذریعے آگے بڑھ رہے ہیں جیسا کہ تابکاری۔

آئن سازی خصوصیات کی بنیاد پر تابکاری کی دو قسمیں ہیں۔

آئنیزنگ تابکاری۔

 ایسی تابکاری جس میں ایٹمز کے آئن کے بننے اور کیمیکل بانڈز کے ٹوٹنے کی صلاحیت ہو۔ جیسا کھ ایکس رے، گاما رے۔

نان آئنزنگ تابکاری۔

 ایسی تابکاری جس میں ایٹمز کے آئن کے بننے اور کیمیکل بانڈز کے ٹوٹنے کی صلاحیت نہ ہو۔ جیسا کھ

آر ایف لہریں۔

یہ کئی سالوں سے جانا پہچانا ہے جو آر ایف تابکاری کو بلند ترین سطح پر دکھاتا ہے جو حیاتیاتی ٹشو کو تیزی سے گرم کرنے سے آر ایف توانائی کی صلاحیت کی وجہ سے نقصان دہ ھوسکتا ہے۔ یہ وہ اصول ہے جس کے ذریعے مائکروویو اوون میں کھانا پکتا ہے اور بہت زیادہ آر ایف کی کثافت کی طاقت کو دکھاتا ہے۔ مثال کے طور پر ۱۰۰ ایم ڈبلیو ، سی ایم ٹو یا اس سے بھی زیادہ ، حیاتیاتی ٹشوزکی حرارت اور جسم کے درجہ حرارت میں اضافہ کے واضح طور پر نتائج پیدا کرسکتے ہیں۔

اس کو ذہن میں رکھتے ہوئے، پاکستان کی انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وزارت نے غیرآئنیزنگ تابکاری کے تحفظ پر بین الاقوامی کمیشن کو اپنایا ہے۔ جس میں تابکاری کرنے کے لیے عوامی اور پیشھ وارانھ نمائش کے لیے ھدایات درج ہیں۔ یہ ہدایات الیکٹرک کی شرائط میں زیادہ سے زیادہ جائز نمائش کی وضاحت اور مقناطیسی میدان کی طاقت اور دیگر تکنیکی پیرامیٹرز کے لیے مختلف فریکونسی رینج پر مشتمل ہیں